منگل‬‮   28   مئی‬‮   2024
 
 

بھارتی سپریم کورٹ نے انڈیا کے غیر قانونی طور پر زیر قبضہ جموں و کشمیر میں مودی کی ہندوتواپالیسیوں کے سخت ناقد گوتم نولکھا کی نظر بندی میں توسیع کردی

       
مناظر: 751 | 14 Dec 2022  

نئی دلی (نیوز ڈیسک ) بھارتی سپریم کورٹ نے انسانی حقوق معروف علمبردار گوتم نولکھا کی نظر بندی میں جنوری کے دوسرے ہفتے تک توسیع کر دی ہے۔
کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق بھارت کے غیر قانونی طور پر زیر قبضہ جموں و کشمیر میں مودی کی ہندوتواپالیسیوں کے سخت ناقد گوتم نولکھا ایلگار پریشد اور مائونوازباغیوں سے مبینہ طورپر روابط کے ایک جھوٹے مقدمے میں جیل میںقید ہیں ۔جسٹس کے ایم جوزف اور جسٹس بی وی ناگرتنا پر مشتمل سپریم کورٹ کے ایک بنچ نے گوتم نولکھا کی گھر میں نظربندی میں جنوری کے دوسرے ہفتے تک توسیع کر دی ہے ۔کینسر کے مرض میں مبتلاانسانی حقوق کے 70سالہ کارکن اپریل 2020 سے قیدہیں اورکئی امراض میںمبتلا ہیں ۔ سپریم کورٹ مقدمے کی سماعت کے دوران بھارتی تحقیقاتی ادارے این آئی اے سے کہا تھا کہ وہ پوری ریاستی طاقت کے باوجود 70سالہ علیل شخص کو گھر میں نظر بند نہیں رکھ سکتی۔ ایڈیشنل سالیسٹر جنرل ایس وی راجو کے عدالت میں پیش نہ ہونے کی وجہ سے سپریم کورٹ نے گوتم نولکھا کی نظر بندی میں آئندہ سال جنوری کے دوسرے ہفتے تک توسیع کر دی ہے ۔

مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی انسانیت دشمنی کی تفصیل
From Jan 1989 till 29 Feb 2024
Total Killings 96,290
Custodial killings 7,327
Civilian arrested 169,429
Structures Arsoned/Destroyed 110,510
Women Widowed 22,973
Children Orphaned 1,07,955
Women gang-raped / Molested 11,263

Feb 2024
Total Killings 0
Custodial killings 0
Civilian arrested 317
Structures Arsoned/Destroyed 0
Women Widowed 0
Children Orphaned 0
Women gang-raped / Molested 0